PART 30: A little effort to put down some good qualities of a character, described by the Holy Qura’an

٭ قُرآنِ پاک میں بیان کردہ شخصی اوصاف میں سے چند ایک ، اختصار کے ساتھ، حصہ 30

PART 30: A little effort to put down some good qualities of a character, described by the Holy Qura’an

-پارہ 30-

-1- نیند کو سکون، رات کو لباس، دن کو معاش کے لئے استعمال کیا جائے۔
-سورۃ النباء/ 9 – 10 -11/

– وَجَعَلْنَا نَوْمَكُمْ سُبَاتًا۔ وَجَعَلْنَا اللَّيْلَ لِبَاسًا۔ وَجَعَلْنَا النَّهَارَ مَعَاشًا
– ترجمہ: اور تمہاری نیند کو راحت کا باعث بنایا۔ اور رات کو پردہ پوش بنایا۔ اور دن کو روزی کمانے کے لیے بنایا۔

-2- ابرار ہمیشہ نعمت میں ہوں گے اور نعمت ذہنی اور نفسیاتی سکون میں ہے۔
– سورۃ الانفطار/ 13/

– إِنَّ الْأَبْرَارَ لَفِي نَعِيمٍ
– ترجمہ: بےشک نیک لوگ نعمت میں ہوں گے

-3- ناپ تول میں کمی نہ کی جائے۔
– سورۃ المطففین/ 1/

– وَيْلٌ لِّلْمُطَفِّفِينَ
– ترجمہ: کم تولنے والوں کے لیے تباہی ہے.

-4- انسان اپنی خلقت پر غور کرکے اللہ کی قدرت کا شعور کرسکتا ہے۔
– سورۃ الطارق/ 5 – 6 – 7 -8/

– فَلْيَنظُرِ الْإِنسَانُ مِمَّ خُلِقَ۔ خُلِقَ مِن مَّاءٍ دَافِقٍ۔ يَخْرُجُ مِن بَيْنِ الصُّلْبِ وَالتَّرَائِبِ۔ إِنَّهُ عَلَىٰ رَجْعِهِ لَقَادِرٌ۔
– ترجمہ: پس انسان کو دیکھنا چاہیے کہ وہ کس چیز سے پیدا کیا گیا ہے۔ ایک اچھلتے ہوئے پانی سے پیدا کیا گیا ہے۔ جو پیٹھ اور سینے کی ہڈیوں کے درمیان سے نکلتا ہے۔ بے شک وہ اس کے لوٹانے پر قادر ہے۔

-5- نفسِ مطمئنہ ہی کامیاب نفس ہوگا، اطمئنان ہی سب سے بڑی کامیابی اور نعمت ہے۔
– سورۃ الفجر/ 27 – 28/

– يَا أَيَّتُهَا النَّفْسُ الْمُطْمَئِنَّةُ۔ ارْجِعِي إِلَىٰ رَبِّكِ رَاضِيَةً مَّرْضِيَّةً۔
– ترجمہ: (ارشاد ہوگا) اے اطمینان والی روح۔ اپنے رب کی طرف لوٹ چل تو اس سے راضی وہ تجھ سے راضی۔

-6- بھلے لوگوں کا طریقہ صبر اور مرحمت ہے۔
– سورۃ البلد/ 17/

– ثُمَّ كَانَ مِنَ الَّذِينَ آمَنُوا وَتَوَاصَوْا بِالصَّبْرِ وَتَوَاصَوْا بِالْمَرْحَمَةِ.
– ترجمہ: پھر وہ ان میں سے ہو جو ایمان لائے اور انہوں نے ایک دوسرے کو صبر کی وصیت کی اور رحم کرنے کی وصیت کی۔

-7- یتیم اور سائل
– سورۃ الضحیٰ/ 9 – 10/

– فَأَمَّا الْيَتِيمَ فَلَا تَقْهَرْ۔ وَأَمَّا السَّائِلَ فَلَا تَنْهَرْ۔
– ترجمہ: پھر یتیم کو دبایا نہ کرو۔ اورسائل کو جھڑکا نہ کرو۔

-8- تنگی یا مشکل وقت میں دل مضبوط رکھیں۔ مشکل اور آسان وقت ساتھ ساتھ ہیں۔
– سورۃ انشراح/ 5 – 6/

– فَإِنَّ مَعَ الْعُسْرِ يُسْرًا۔ إِنَّ مَعَ الْعُسْرِ يُسْرًا۔
– ترجمہ: پس بے شک ہر مشکل کے ساتھ آسانی ہے۔ بے شک ہر مشکل کے ساتھ آسانی ہے۔

-9- ایمان، نیک عمل، حق کی نصیحت اور صبر کی وصیت کے علاوہ انسان کا معاملہ خسارے میں ہے۔
– سورۃ العصر/ 1 – 2- 3/

– وَالْعَصْرِ۔ إِنَّ الْإِنسَانَ لَفِي خُسْرٍ۔ إِلَّا الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ وَتَوَاصَوْا بِالْحَقِّ وَتَوَاصَوْا بِالصَّبْرِ۔
– ترجمہ: زمانہ کی قسم ہے۔ بے شک انسان گھاٹے میں ہے۔ مگر جو لوگ ایمان لائے اور نیک کام کیے اور حق پر قائم رہنے کی اور صبر کرنے کی آپس میں وصیت کرتے رہے۔

Part 30:

-1- Division of daily hours:
AlQuran/ Alnabaa/ 9, 10, 11/ And made your sleep for rest, And made the night as a covering, And We have made the day for livelihood.

-2- Pious are always in a state of peace:
AlQuran/ AlInfitar/13/ Indeed, the righteous will be in pleasure.

-3- Fraud is prohibited:
AlQuran/ Al-Mutaffifin/ 1/ Woe to Al-Mutaffifun (those who give less in measure and weight).

-4- Human should consider his own creation:
AlQuran/ At-Taariq/ 5, 6, 7, 8/ Now let man but think from what he is created! He was created from a fluid, ejected. Emerging from between the backbone and the ribs. Surely (Allah) is able to bring him back (to life)!

-5- A righteous soul is the satisfied one:
AlQuran/ Al-Fajr/ 27, 28/ (To the righteous soul will be said:) “O (thou) soul, in (complete) rest and satisfaction! Return to your Lord, well-pleased and pleasing [to Him].

-6- The believers enjoy patience and kindness:
AlQuran/ Albalad/ 17/ Then will he be of those who believe, and enjoin patience, (constancy, and self-restraint), and enjoin deeds of kindness and compassion.

-7- Behaviour with orphan and beggar:
AlQuran/ AlDuhaa/ 9, 10/ Therefore, treat not the orphan with harshness, And repulse not the beggar.

-8- There is always some relief with hardships:
AlQuran/ Ash-Sharh/ 5, 6/ So, verily, with every difficulty, there is relief. Verily, with every difficulty there is relief.

-9- Beneficial deeds for a man are: believing, doing right deeds, advise of truth and patience:
AlQuran/ Alaser/ 1, 2, 3/ By time. Indeed, mankind is in loss. Except for those who have believed and done righteous deeds and advised each other to truth and advised each other to patience.
Ref: https://www.searchtruth.com/chapter_display_all.php

صدق اللہ العظیم و الحمدللہ رب العالمین